ائیر ٹریول انڈسٹری کو کرونا کے بحران سے نکالنے کیلئے حکومت دوسرے شعبوں کی طرح ٹریول ایجنٹس کیلئے بھی خصوصی ریلیف پیکج کا اعلان کرے۔رانا محمد سکندر اعظم خاں

فیصل آباد ( حشمت خان ) ائیر ٹریول انڈسٹری کو کرونا کے بحران سے نکالنے کیلئے حکومت دوسرے شعبوں کی طرح ٹریول ایجنٹس کیلئے بھی خصوصی ریلیف پیکج کا اعلان کرے۔ یہ مطالبہ فیصل آباد چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر رانا محمد سکندر اعظم خاں نے فیصل آباد ٹریول ایجنٹس ایسوسی ایشن کے ایک وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔ انہوں نے بتایا کہ فیصل آباد چیمبر کی کوششوں سے فیصل آباد سے براہ راست بین الاقوامی پروازوں کا سلسلہ شروع ہوا جبکہ اب یہاں بڑے جہازوں کے اترنے کیلئے رن وے کو بھی اپ گریڈ کیا جارہا ہے۔ مزید برآں فیصل آباد سے براہ راست کارگو پروازیں شروع کرنے کیلئے بھی منصوبہ بندی جاری ہے۔ انہوں نے فیصل آباد کی تیز رفتار صنعتی ترقی کے حوالے سے بتایا کہ یہاں ایم تھری انڈسٹریل سٹی کے بعد اب چین پاکستان اکنامک کو ریڈور کے تحت علامہ اقبال سپیشل اکنامک زون بھی تعمیر کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت فیصل آباد سے سالانہ تین لاکھ کے قریب مسافر آتے اور جاتے ہیں جبکہ آنے والے چند سالوں تک ان مسافروں کی تعداد 5سے 8لاکھ سالانہ تک بڑھنے کا امکان ہے۔ انہوں نے کہا کہ فیصل آباد انٹر نیشنل ائیر پورٹ کے ذریعے سفر کرنے والوں کے علاوہ مسافروں کی بڑی تعداد دوسرے بڑے ہوائی اڈوں کے ذریعے نہ صرف خود سفر کرتی ہے بلکہ اپنی ہنگامی نوعیت کی برآمدی کنسائنمنٹس بھی بھیجتی ہے۔ رانا محمد سکندر اعظم خاں نے اس شعبہ کی ترقی کیلئے ٹریول ایجنٹس کے کردار کو سراہا اور بتایا کہ اس وقت فیصل آباد میں تین سو سے زائد ٹریول ایجنسیاں ہیں جن میں سے 50ایاٹا کی ممبر ہیں۔ اسی طرح 30سے 35حج و عمرہ ٹور آپریٹرز بھی کام کر رہے ہیں جن کا کاروبار کرونا لاک ڈاؤن اور عالمی سطح پر فضائی آپریشن بند ہونے کی وجہ سے مکمل طور پر ختم ہو گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سٹیٹ بینک نے اپنے ملازموں کو نہ نکالنے کی شرط پر آسان اور رعایتی نرخوں پر قرضے دینے کا اعلان کیا تھا جبکہ کمرشل بینک چیک کے ذریعے تنخواہ دینے والے ایجنٹوں کی ہی درخواستیں وصول کر رہے ہیں۔ رانا محمد سکندر اعظم خاں نے وفاقی وزیر تجارت عبدالرزاق داؤد سے ویڈیو لنک کے ذریعے ہونے والی ملاقات کے بارے میں بتایا کہ وہ اس سلسلہ میں 22اپریل کو جاری ہونے والے سٹیٹ بینک کے سرکلر میں نئی ترمیم تجویز کر رہے ہیں تاکہ ملازمین کو نقد تنخواہ کی ادائیگی کرنے والے صنعتکار، تاجر اور ٹریول ایجنٹس بھی اس سہولت سے فائدہ اٹھا سکیں۔ انہوں نے کہا کہ اس سکیم کے دائرہ کار کو چھ ماہ تک بڑھانے کا بھی مطالبہ کیا جارہا ہے کیونکہ مکمل لاک ڈاؤن کے بعد کاروبار کو دوبارہ بحال ہونے میں کئی ماہ لگ سکتے ہیں جبکہ بین الاقوامی فضائی کمپنیوں کیلئے دوبارہ آپریشن شروع کرنے کیلئے مزید وقت درکار ہو گا۔ انہوں نے ٹریول ایجنٹس کی اس تجویز کی بھی مکمل حمایت کی کہ انہیں بھی پی آئی اے کے ٹکٹ براہ راست فروخت کرنے کی اجازت دی جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ٹریول ایجنٹس کو کم از کم 3ماہ کیلئے بجلی کے بلوں کی ادائیگی سے بھی مستثنیٰ قرار دیا جائے۔
قائم مقام اسسٹنٹ سیکرٹری جنرل

About The Author

CTN

You might be interested in

LEAVE YOUR COMMENT

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Online Shopping in BangladeshCheap Hotels in Bangladesh